ایسی کیا وجہ تھی کہ میاں نواز شریف اچانک ہی وطن واپس آگئے؟؟اصل کہانی تو اب سامنے آئی

ملک کے معروف صحافی اور تجزیہ نگار حامد میر کا کہنا ہے کہ میاں نوازشریف اچانک ہی پاکستان نہیں آ گئے بلکہ ان کی پاکستا ن واپسی کا پلان ایک ہفتہ پہلے بنا تھا۔نجی ٹی وی کے دوران گفتگو کے کرتے ہوئے

حامد میر کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی او ر وزیر خارجہ خواجہ آصف نے امریکہ جاتے ہوئے راستے میں میاں نواز شریف سے ملاقات کی اور انھیں وطن واپس جانے کامشورہ دیا۔جس پر یہ طے پایا کہ میاں نوازشریف کی وطن واپسی کا اعلان نہیں کیا جائے گا۔ اہم بات یہ ہے کہ مریم نواز کی پوزیشن سب کے سامنے ہے۔ انہوں نے اپنے ٹویٹ میں کہا تھا کہ نواز شریف کو عدالتوں کے سامنے پیش نہیں ہونا چاہئیے لیکن میاں نواز شریف بیٹی کے موقف کے خلاف جا رہے ہیں اور عدالتوں میں پیش ہو رہے ہیں، جس کی وجہ سے ان کے وطن واپسی کے فیصلے کو نہایت اہم قرار دیا جا رہا ہے۔

حامد میر کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی او ر وزیر خارجہ خواجہ آصف نے امریکہ جاتے ہوئے راستے میں میاں نواز شریف سے ملاقات کی اور انھیں وطن واپس جانے کامشورہ دیا۔جس پر یہ طے پایا کہ میاں نوازشریف کی وطن واپسی کا اعلان نہیں کیا جائے گا۔ اہم بات یہ ہے کہ مریم نواز کی پوزیشن سب کے سامنے ہے۔ انہوں نے اپنے ٹویٹ میں کہا تھا کہ نواز شریف کو عدالتوں کے سامنے پیش نہیں ہونا چاہئیے لیکن میاں نواز شریف بیٹی کے موقف کے خلاف جا رہے ہیں اور عدالتوں میں پیش ہو رہے ہیں، جس کی وجہ سے ان کے وطن واپسی کے فیصلے کو نہایت اہم قرار دیا جا رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں