دنیا کی امیرترین مسلم خواتین کی فہرست سامنے آگئی

دنیا کی امیرترین مسلم خواتین کی فہرست سامنے آگئی جن میں سعودی پرنس الولید کی اہلیہ بھی شامل ہیں۔

سعودی شہزادی امیرا الطویل نہ صرف امیر ترین مسلم خاتون ہیں بلکہ یہ الولید بن طلال فاؤنڈیشن کی وائس چیئرپرسن بھی ہیں اورا نہیں مشرق وسطیٰ کی بااثر خواتین میں شمار کیا جاتا ہے۔امیر الطویل سعودی عرب کے 58سالہ پرنس الولید بن طلال کی بیوی ہیں۔رانیہ العبداللہ اردن کی ملکہ ہیں اور یہ دنیا کی سب سے زیادہ مالیت کے اثاثے رکھنے والی ملکہ ہیں۔ ملکہ رانیہ کی مقبولیت کی بڑی وجہ تعلیم، صحت اور سماجی کاموں میں ادا کیا جانے والا مرکزی کردار ہے۔حاجہ حفیظہ برونائی کی ملکہ ہیں اور اپنے شاہانہ طرز زندگی کی وجہ سے دنیا بھر میں مشہور ہیں۔ اس امیر ترین ملکہ کی شادی پر 20 ملین ڈالر سے زیادہ کی رقم خرچ کی گئی تھی۔شہزادی لالہ سلمیٰ مراکش کے بادشاہ محمد ہشتم کی اہلیہ اور دوبچوں کی ماں ہیں، خاتون اول ہونے کے باوجود ملکہ کے اثاثے نسبتاً کم ہیں۔ ان کے پاس اڑھائی بلین ڈالر موجود ہیں۔شیخہ میتھا بنت محمد بن راشدالمکتوم کھیلوں کی دنیا میں سرگرم ہے ، یہ خاتون ایتھلیٹ ہیں اور ان کے اثاثوں کی مجموعی مالیت 40 بلین ڈالر ہے۔وہ متحدہ عرب امارات کے وزیر اعظم اور نائب صدر رہنے والے شیخ محمد بن راشد المکتوم کی بیٹی ہیں ۔شیخہ حنادی بنت نصر التھانی کا شمار قطر کی کامیاب ترین کاروباری خواتین میں ہوتا ہے، یہ اموال نامی کمپنی کی بانی اور چیئرپرسن ہیں، شیخہ بینکنگ ، سرمایہ کاری اور رئیل اسٹیٹ کے شعبوں سمیت کئی کمپنیوں کی سرپرستی کے فرائض سرانجام دے رہی ہیں۔

شہزادی فاطمہ کلثوم ظہرگودابری سعودی عرب کے شیخ عبدی المحمد سے شادی کے بعد اب سرکاری طور پرسعودی عرب کی ملکہ بن چکی ہیں اور دنیا کے امیرترین خاندانوں میں سے ایک کے ساتھ تعلق رکھتی ہیں۔سلطانہ نور ظاہرہ ملائیشیا کی ایک ریاست ٹرینگانو کے بادشاہ الوتھیکوبلہ ٹوانکومیزان زین العابدین کی اہلیہ ہیں اور ان کے اثاثوں کی مالیت 15 بلین ڈالر سے زائد ہے۔حجاہ مجیدہ نورالبقیاہ برونائی کے سلطان حسنال بولکیاہ کی دوسری صاحبزادی اور چوتھی اولاد ہیں،سلطان آف برونائی 1997ء میں دنیا کے امیرترین شخص اور سونے کے شوقین تھے۔

قطر سے تعلق رکھنے والی شیخہ موزابنت نصرالمسندامیر ترین خاتون کا شمار دنیا کی بااثر خواتین میں کیا جاتا ہے۔ یہ قطر کے سابق میئر شیخ حامد بن خلیفہ التھانی کی دوسری بیوی ہیں۔شیخ حامد کے 2013ء میں اندازاً اثاثے 7بلین ڈالر سے زائد تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں